ہیڈلائنز


دوبئی میں شوکت خانم ہسپتال کیلئے فنڈریزنگ مہم

Written by | روزنامہ بشارت

دبئی : پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان اپنی والدہ کے نام پر قائم کئے گئے شوکت خانم میموریل ہسپتال کیلئے فنڈریزنگ کے سلسلہ میں حسب سابق اس بار پھر دوبئی تشریف لائے۔اس بار ان کے ہمراہ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید اور سابق گورنر پنجاب اور اب پی ٹی آئی پنجاب کے اہم عہدیدار محمد سرور موجود تھے۔
دوبئی کے اٹلانٹس ہوٹل میں عمران خان کے چاہنے والوں کا جم غضیر موجود تھا ایک اطلاع کے مطابق 500سے زائد لوگ اس ایونٹ میں موجود تھے۔جبکہ مخصوص لوگوں میں عمران چودھری،مایہ علی،ماہرہ خان،فخر عالم،ڈاکٹر فیصل،امجد اقبال امجد،محمد جازم،عرفان افسر،رضوان بنگش،فخرعباس،مدثر خوشنودِشاہدسیلفی،اسلم سرکائی اور عبید اللہ بھی تقریب میں شریک تھے۔

9
تقریب ہذا میں عمران نے شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال لاہور کی کارکردگی کے بارے حاضرین مجلس کو آگاہ کیا اور کہا کہ اس ہسپتال سے مستحقین کیلئے فری علاج کا سلسہ جاری ہے جس کیلئے ہر ماہ لاکھوں بلکہ کروڑوں روپے کی ضرورت پڑتی ہے یہی وجہ ہے کہ ہسپتال کے اخراجات پورے کرنے کیلئے مجھے فنڈز کی ضرورت پڑتی ہے جومیں گذشتہ25 سال سے اکٹھے کر رہا ہوں۔اب میں یہ ذمہ داری نوجوان نسل کو سونپنا چاہتا ہوں تاکہ وہ آگے آئیں اور میرا ہاتھ بٹائیں۔
عمران خان نے کہا کہ شوکت خانم میموریل ہسپتال پشاور میں بھی زیر تعمیر ہے۔اس ہسپتال کے شروع ہونے سے بیت سے کینسر کے مریضوں کا علاج ممکن ہوسکے گا۔لیکن اس مقصد کیلئے اہل مثروت حضرات کو آگے آنے کی ضرورت ہے ۔اٹلانٹس دوبئی میں ہونے والے ایونٹ کے دوران39 کروڑ یا اس

3

 

سے کچھ زائد کی رقم اکٹھی ہوئی یہ بات شیخ رشید نے پرائیوٹ چینل کو دئیے جانے والے ایک انٹرویو میں بتائی۔
تقریب میں موجود لوگوں نے نقد رقوم اور چیک لفافوں میں ڈال کر سٹیج پر کھڑے عمران خان کو خود جا کر دیے اور ساتھ تصاویر بھی اتروائیں۔اس موقع پر عمران نے کوئی سیاسی بات نہیں کی کیوں؟تقریب صرف فنڈریزنگ کیلئے منعقد کی گئی۔اس ایونٹ کے بعدعمران خان تو واپس پاکستان چلے گئے جبکہ محمد سرور اور شیخ رشید دوبئی میں ہی قیام پزیر ہیں۔جہاں ان کے اعزاز میں ایک عشائیہ بھی اہتمام کیا گیا جس میں PTIکارکنوں نے شرکت کی۔

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ