ہیڈلائنز

Reporter WU

Write on جمعرات, 14 دسمبر 2017

لندن میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی سابق وزیراعظم نوازشریف سے اہم ملاقات جاری ہے۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے ہمراہ ترکی سے لندن پہنچے ہیں جہاں وہ نوازشریف سے اہم ملاقات کررہے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے صدر نواز شریف سے ملاقات کے دوران ملکی سیاسی صورتحال سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

سابق وزیراعظم نوازشریف لندن میں اپنے صاحبزادے حسن نواز کے دفتر پہنچے جہاں حسن نواز اور مریم نواز بھی ان کے ہمراہ تھے۔

اس موقع پر ایک صحافی نے میاں نوازشریف سے سوال کیا کہ آج کوئی اہم فیصلہ متوقع ہے؟ جس پر نوازشریف مسکرادیئے اور جواب دیئے بنا چلے گئے۔

Write on جمعرات, 14 دسمبر 2017

کراچی : چیرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کو جب عدالت نے جے آئی ٹی میں گھسیٹا تو کرپٹ مافیا کو پیغام گیا کہ اب سب کی باری آئے گی۔

کراچی بار کی تقریب میں وکلا سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ تاریخ بتاتی ہے کبھی عدالتوں نے طاقتور پر ہاتھ نہیں ڈالا، جہاں طاقتور کے لئے ایک اور کمزور کے لئے دوسرا قانون ہو تو وہ معاشرہ ترقی نہیں کر سکتا۔

عمران خان نے کہا کہ پاناما کیس سے متعلق سوا سال تک جو جہاد ہوا اس کا فیصلہ کن وقت ہے اور اب ہمیشہ کے لئے پاکستان بدل چکا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کبھی اس ملک میں طاقتور مافیا کو کٹہرے میں نہیں لایا گیا اور نواز شریف کو عدالتوں اور جے آئی ٹی میں گھسیٹا گیا تو کرپٹ مافیا کو بھی پیغام گیا کہ اب ان کی بھی باری آئے گی۔

چیرمین تحریک انصاف نے کہا کہ نواز شریف کہتے ہیں کہ انہیں کیوں نکالا، وہ یہ نہیں کہہ رہے ہیں ان کے ساتھ ناانصافی ہوئی بلکہ کہہ رہے ہیں کہ وہ طاقت ور ہیں اور عدالتیں انہیں کیسے بلاسکتی ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ نواز شریف کو معلوم ہے کہ قانون کہتا ہے کہ پبلک آفس ہولڈر کو اثاثوں کا جواب دینا پڑتا ہے لیکن انہوں نے کہا کہ آمدن سے زائد اثاثے ہیں تو تمھیں کیا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے ساتھ جو یہ کہہ رہے ہیں کہ جمہوریت خطرے میں ہے تو انہیں اپنی کرپشن خطرے میں دکھائی دے رہی ہے۔

چیرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ کرپٹ مافیا اقتدار میں آتا ہے اور اقتدار سے جاتے ہیں تو جیل چلے جاتے ہیں، پیپلزپارٹی کی پہلی حکومت ختم کی گئی تو آصف زرداری وزیراعظم ہاؤس سے جیل گئے اور پھر حکومت آئی تو وہ دوبارہ وزیراعظم ہاؤس آئے۔

عمران خان نے کہا کہ پہلے قانون کی بالادستی ہوتی ہے پھر ترقی اور خوشحالی آتی ہے، کوئی بھی ملک قانون کی بالادستی کے بغیر ترقی نہیں کرسکتا، امید ہے آنے والے دنوں میں ایسی بڑی تبدیلی آرہی ہے اور اسی سے پاکستان اٹھے گا۔

Write on جمعرات, 14 دسمبر 2017

اسلام آباد: کمرہ عدالت میں موبائل فون استعمال کرنے پر کیپٹن (ر) صفدر کا فون عدالتی حکم پر ضبط کرلیا گیا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے دو رکنی بنچ نے کیپٹن (ر) صفدر کی ضمانتی مچلکوں پر رہائی کے خلاف نیب کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

دوران سماعت کیپٹن (ر) صفدر نے موبائل فون استعمال کیا جس پر عدالت نے ان کی سرزنش کی اور عدالتی حکم پر ان کا فون ضبط کرلیا گیا۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے انہیں مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ 'کیا آپ پارک میں بیٹھے ہوئے ہیں، آپ کو پتا نہیں کہ عدالت میں بیٹھے ہوئے ہیں'۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے عدالتی عملے کو حکم دیا کہ 'لے لیں ان سے فون' جس پر عملے نے فوری طور پر ان سے موبائل فون لے لیا جب کہ سماعت کے اختتام پر کیپٹن (ر) صفدر نے عدالت سے معافی بھی مانگی۔

Write on بدھ, 13 دسمبر 2017

پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باوجوہ کا کہنا ہے کہ فوج فاٹا کی قومی دھارے میں شمولیت کی مکمل حمایت کرتی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے وفاقی منتظم شدہ قبائلی علاقہ جات (فاٹا) سے آنے والے وفود کو یقین دہانی کرائی کہ پاک فوج فاٹا کو قومی دھارے میں شامل کرنے کے عمل کی مکمل حمایت کرتی ہے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق قبائلی عمائدین اور یوتھ جرگہ کے وفود نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔

وفود نے فاٹا کی قومی دھارے میں شمولیت کے حوالے سے پاک فوج کی قربانیوں، کاوشوں اور کردار کو سراہا۔

اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کے ساتھ مکمل تعاون کرنے پر قبائلی عمائدین اور نوجوانوں کی تعریف کی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے کہا کہ وہ فاٹا کے مستقبل کے حوالے سے قبائلی وفود کے خیالات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

ترجمان پاک فوج کے مطابق آرمی چیف کا مزید کہنا تھا کہ فاٹا کے بہادر عوام کی قربانیوں کے ذریعے جو کامیابیاں حاصل کی گئیں ہیں انہیں مزید مستحکم کیا جارہا ہے جبکہ ملک پائیدار امن کی جانب گامزن ہے۔

سربراہ پاک فوج نے اس موقع پر شرکاء کو پاک افغان سرحد پر کیے جانے والے سیکیورٹی انتظامات اور باہمی تعاون کے حوالے سے افغان قیادت سے ہونے والے مذاکرات کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا۔ 

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اس موقع پر نوجوانوں سے کہا کہ وہ فاٹا اور پاکستان میں قیام امن اور ترقی کے لیے اپنا کردار ادا کرتے رہیں کیوں کہ مستقبل میں ملک کی باگ ڈور نوجوانوں نے ہی سنبھالنی ہے۔

Write on بدھ, 13 دسمبر 2017

ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے مسلمان ممالک کے رہنماؤں پر زور دیا ہے کہ وہ یروشلم کو فلسطینی ریاست کے ’مقبوضہ دارالحکومت‘ کے طور پر تسلیم کریں۔

اسلامی ممالک کے تعاون کی تنظیم (او آئی سی) کے ترکی کے شہر استنبول میں منعقد ہونے والے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ترک صدر نے اسرائیل پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ ’دہشت گرد ریاست‘ ہے۔

امریکہ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کیے جانے کے بعد او آئی سی کا ہنگامی اجلاس طلب کیا گیا ہے۔

صدر رجب طیب اردوغان نے کہا کہ امریکہ کے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کی کوئی حیثیت نہیں ہے۔

فلسطین کے صدر محمود عباس نے کہا ہے کہ امریکہ امن بات چیت میں کسی قسم کا کردار ادا کرنے کے لیے نااہل ہو گیا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا ہے کہ ’امن بات چیت میں ہم امریکہ کے کسی کردار کو تسلیم نہیں کریں گے کیونکہ اس نے اپنے تعصب کو ثابت کر دیا ہے‘۔

57 رکنی تنظیم او آئی سی کی صدارت اس وقت ترکی کے پاس ہے اور ترک صدر رجب طیب اردوغان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس اقدام کے خلاف آواز اٹھا چکے ہیں۔

ادھر سنیچر کو عرب لیگ کے وزرائے خارجہ کے اجلاس میں امریکہ پر زور دیا گیا تھا کہ وہ اپنے اس اقدام کو واپس لے۔ تاہم عرب ممالک کی جانب سے اس حوالے سے اب تک کوئی ٹھوس اقدامات نہیں کیے گئے ہیں۔

او آئی سی کے اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے یکہ طرفہ فیصلے کے بعد سے اسرائیل اور ترکی کے درمیان تعلقات بڑی تیزی سے کشیدگی کی طرف سے بڑھتے چلے جا رہے اور اتوار کو دونوں ملکوں کے رہنماؤں کی طرف سے تلخ بیانات کا تبادلہ ہوا ہے۔

اس سے قبل ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے امریکہ کی طرف سے اس متنازع فیصلے کے خلاف لڑنے کا اعلان کیا اور اسرائیل کو ایک 'دہشت گرد' ریاست قرار دیا جو بچوں کو قتل کرتی ہے۔

چند گھنٹوں بعد اسرائیل کے وزیر اعظم بن یامین نتن یاہو نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ ایسے لیڈر سے لیکچر نہیں لیں گے جو کردستان کے دیہاتوں پر بم برساتا ہے اور دہشت گردوں کی مدد کرتا ہے۔

حالیہ برسوں میں دونوں ملک کے درمیان تعلقات بہتر ہو رہے تھے لیکن ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے یروشلم کے بارے میں فیصلے کے بعد ترکی نے شدید غم و غصے کا اظہار کیا اور انقرا میں امریکی سفارت خانے کے سامنے سب سے پہلے عوامی احتجاج کیا گیا۔

واضح رہے کہ امریکہ دنیا کا پہلا ملک بن گیا ہے جس نے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کیا ہے۔

اس فیصلے کے بعد سعودی عرب کے خفیہ ادارے کے ایک سابق سربراہ نے تنبیہ کی ہے کہ یہ فیصلہ 'انتہا پسند گروہوں کے لیے آکسیجن' کا کردار ادا کرے گا جس کے بعد 'انھیں سنبھالنے میں دشواری ہو سکتی ہے۔'

فلسطینی علاقوں میں اس فیصلے کے خلاف ہونے والے مظاہروں میں اب تک چار فلسطینی شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔ فیصلے کے بعد غزہ پٹی سے مبینہ راکٹ حملوں کے جواب میں اسرائیل نے فضائی کارروائیاں بھی کی ہیں جن میں سینکڑوں افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

Write on بدھ, 13 دسمبر 2017

پشاور : پشاور ہائی کورٹ نے کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کو رہائی نہ دینے کا حکم دیتے ہوئے ملزم کا کیس نمٹا دیا۔

پشاور کے ہائی کورٹ میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کی رہائی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ کیس کی سماعت پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے کی۔

چیف جسٹس یحییٰ آفریدی اور جسٹس اعجاز انور پر مشتمل دو رکنی بینچ نے آنے ہونے والی سماعت میں فیصلہ دیتے ہوئے کیس نمٹا دیا۔ مقدمے کی سماعت کے دوران حکومت کی طرف سے ایڈووکیٹ جنرل عدالت میں پیش ہوئے۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد حکومت کو کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کو معافی یا رہائی دینے سے روک دیا۔ اس موقع پر درخواست گزار نے اپنے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں خطرہ ہے کہ سانحہ اے پی ایس کے شہداء کے ذمہ دار کو معافی دیدی جائے گی۔ جس پر ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت میں جواب دیتے ہوئے کہا کہ ایسی کوئی بات نہیں ،ادارے ملزم سے تفتیش کر رہے ہیں۔

 

بعد ازاں عدالت نے دونوں جانب سے دلائل اور مؤقف دننے کے بعد حکومت کو احسان اللہ احسان کو رہائی نہ دینے کا حکم دیتے ہوئے کیس نمٹا دیا۔

واضح رہے کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کی ممکنہ رہائی روکنے کیلئے پشاور ہائی کورٹ میں متفرق درخواستیں دائر کی گئی تھیں۔ جس میں درخواست گزاروں کا کہنا تھا کہ احسان اللہ احسان نے آرمی پبلک اسکول پر حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی اس لیے اس کے خلاف مقدمہ فوجی عدالت میں سنا جائے اور فوجی عدالت ہی سے سزا دی جائے۔

 

رٹ دائر کرنے کا فیصلہ اسکول حملے میں شہید ہونے والے 25 بچوں کے والدین نے متفقہ طور پر کیا۔

 

ایک درخواست اس واقعے میں شہید ہونے والے طالب علم صاحبزادہ عمر کے والد فضل خان ایڈووکیٹ نے جمع کرائی تھی۔ اس رٹ میں کہا گیا تھا کہ کالعدم تنظیم تحریک طالبان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کے خلاف فوجی عدالت میں مقدمہ چلایا جائے۔

 

رٹ میں چیف آف آرمی اسٹاف، وفاقی سیکریٹری داخلہ، چیف سیکریٹری خیبر پختونخوا، سیکریٹری دفاع، ڈی جی آئی ایس آئی اور سیکریٹری قانون و انصاف کو فریق بنایا گیا ہے۔ اس رٹ میں یہ موقف اختیار کیا گیا ہے کہ درخواست گزار کا بیٹا صاحبزادہ عمر آٹھویں جماعت کا طالبعلم تھا جسے آرمی پبلک اسکول پر حملے میں شہید کیا گیا تھا۔

 

شہید بچوں کے والدین کی جانب سے اب تک تین سے زائد رٹیں پشاور ہائی کورٹ میں جمع کرائی جا چکی ہیں، دو اب تک زیر التوا ہیں۔ ان میں جوڈیشل انکوائری کے لیے کہا گیا تھا اور دوسری پیٹیشن ایف آئی ار میں ترمیم کا کہا گیا تھا تاکہ ان افراد کو بھی اس ایف آئی آر میں نامزد کیا جا سکے جن کی غفلت سے یہ واقعہ پیش آیا تھا۔

 

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ 16 دسمبر 2014 کو پشاور کے آرمی پبلک اسکول حملے میں طلبہ اور اسٹاف سمیت 148 افراد شہید ہوئے تھے۔

 

Write on بدھ, 13 دسمبر 2017

کراچی: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ فاٹا میں دہشت گردی کی وجہ سے خلاء پیدا ہوا جسے پر کرنے کے لیے اسے فوری طور پر خیبرپختونخوا میں ضم کیا جائے۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان (نیپ) کی شق 12 میں کہا گیا تھا کہ فاٹا کو سیٹل کرنا ہے، دہشت گردی روکنی ہے تو وہاں موجود خلاء کو پر کیا جائے۔

عمران خان نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کے دباؤ میں حکومت اس معاملے کو 2022 تک لیکر جانا چاہتی ہے۔

ماڈل ٹاؤن واقعے کی رپورٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نجفی کی رپورٹ میں وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ اور وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف پر الزام عائد کیا گیا ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ ماڈل ٹاؤن واقعے میں 14 افراد کو پولیس کے ذریعے مارا گیا جبکہ 100 کو گولیاں لگیں۔

 

تحریک انصاف کے چیئرمین نے کہا کہ ختم نبوت کا مسئلہ ابھی ختم نہیں ہوا، سب پوچھ رہے ہیں کہ کیا ضرورت تھی خفیہ تبدیلی کی تاہم اس کے باوجود یہ پکڑے گئے۔

 

انہوں نے کہا کہ ظفر الحق کی رپورٹ کا پوری قوم انتظار کررہی ہے۔

 

قبل ازوقت انتخابات کے اپنے مطابلے کو ایک مرتبہ پھر دہراتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مسئلوں کا حل فوری انتخابات ہیں، ہر روز ملک میں مشکلات بڑھتی جارہی ہیں۔

اس سے قبل عمران خان نے کراچی کے تاجروں سے ملاقات کی جس کے دوران تاجروں نے ان سے گلے شکوے کیے۔

تاجروں کا کہنا تھا کہ عارف علوی ہمارے ایم این اے ہیں، اب نظر آئے، پی ٹی آئی کو ووٹ دیے لیکن مسائل حل نہیں ہوئے۔

تاجروں کا موقف تھا کہ پی ٹی آئی نے الیکشن کے بعد کام نہیں کیا، کراچی میں دھرنوں کیلیے کوئی ایک جگہ مقرر کریں۔

عمران خان نے بھی اعتراف کیا کہ وہ کراچی کا مناسب وقت دینے سے قاصر رہے کیوں کہ وہ ’مافیہ‘ سے لڑنے میں مصروف تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ کراچی کے مسائل صرف براہ راست میئر کے انتخاب سے حل ہوسکتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ ساری سیاسی جماعتوں کو معلوم تھا کہ 2013 کے الیکشن میں دھاندلی ہوئی، الیکشن کمیشن نے ن لیگ سے مل کر دھاندلی کی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف سے پاناما پر سوال کیا تو انہوں نے جھوٹ پر جھوٹ بولے، اگر وہ احتجاج نہ کرتے تو پاناما کو دفن کر کے اس پر پھول اگے ہوتے۔

عمران کان نے قائد آباد میں کارکنوں سے خطاب میں کراچی کو پی ٹی آئی کا شہر قرار دیدیا اور کہا کہ موقع ملا تو صحیح معنوں ميں بلدیاتی نظام لاکر دکھائيں گے۔

 

Write on منگل, 12 دسمبر 2017

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے فلسطین کے سفیر ایچ ای ولید اے ایم ابو علی نے جنرل ہیڈ کوارٹر راولپنڈی میں ملاقات کی۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ایک اعلامیے کے مطابق فلسطینی سفیر نے فلسطین کاز کے لیے پاکستان کی حمایت پر شکریہ ادا کیا۔

آرمی چیف نے فلسطینی سفیر کو کہا کہ مسئلہ کشمیر اور مسئلہ فلسطین کو پاکستانی قوم کی اخلاقی اور سیاسی حمایت حاصل ہے اور دونوں مسئلوں پر اصولی موقف کی حمایت جاری رکھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان فلسطین کے حل طلب مسئلے کو مسئلہ کشمیر کی طرح دیکھتا ہے۔

خیال رہے کہ یہ ملاقات ایک ایسے موقع پر کی گئی ہے جب کچھ روز قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے عالمی دباؤ مسترد کرتے ہوئے مقبوضہ بیت المقدس (یروشلم) کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا باضابطہ اعلان کیا۔

صفحہ نمبر 1 ٹوٹل صفحات 35
Cloudy

11°C

اسلام آباد

Cloudy
Humidity: 66%
Wind: NW at 11.27 km/h
Friday 5°C / 13°C Sunny
Saturday 5°C / 14°C Sunny
Sunday 7°C / 16°C Partly cloudy
Monday 10°C / 18°C Mostly cloudy
Tuesday 12°C / 18°C Mostly sunny
Wednesday 12°C / 17°C Sunny
Thursday 10°C / 17°C Sunny

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ