ہیڈلائنز


سنگین غداری کیس میں پرویز مشرف 31 مارچ کو عدالت میں طلب کرلئے گئے

Written by | روزنامہ بشارت

اسلام آباد: سنگین غداری کیس کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کو بیان ریکارڈ کرانے کے لئے 31 مارچ کو طلب کرلیا۔ جسٹس مظہرعالم میاں خیل کی سربراہی میں جسٹس طاہرہ صفدر اور جسٹس یاورعلی پر مشتمل خصوصی عدالت نے پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کی سماعت کی۔ سماعت کے آغاز پر وکیل استغاثہ نے کہا کہ آئین کے تحت ٹرائل روزانہ کی بنیاد پر ہونا چاہیے، خصوصی عدالت کیس کو ملتوی کرے تو اس کی ٹھوس وجوہات ہونی چاہییں۔ پرویز مشرف خود نہیں بلکہ ان کے وکیل پیش ہوتے ہیں، گواہوں کے بیانات قلم بند ہوچکے ہیں اب پرویز مشرف کو طلب کیا جائے۔
جس پر پرویز مشرف کے وکیل بیرسٹر فروغ نسیم نے موقف اختیار کیا کہ پرویز مشرف ضمانت پر ہیں ، انھیں حاضری سے استثنا حاصل ہے، جس پر جسٹس مظہرعالم میاں خیل نے استفسار کیا کہ انہیں استثنا کس نے دیا تو جواب میں سابق صدر کے وکیل نے بتایا کہ ان کے موکل کو عدالت نے فرد جرم عائد کرنے کے بعد استثنیٰ دیا تھا۔ جس پر جسٹس مظہر عالم نے ریمارکس دیئے کہ اگر انہیں استثنیٰ حاصل ہے تو عدالت جب مناسب سمجھے گی بلا لے گی۔
عدالت نے فریقین کا موقف سننے کے بعد پرویز مشرف کو 25مارچ کو طلب کر لیا، جس پر ملزم کے وکیل نے ان کی میڈیکل رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ پرویز مشرف کی صحت خراب ہے، وہ سفر نہیں کرسکتے۔ جس پر جسٹس مظہر عالم نے حکم دیا کہ پرویز مشرف کی میڈیکل رپورٹ الگ درخواست کےساتھ جمع کرائی جائے، عدالت نے سابق صدر کو 31 مارچ کو ذاتی حیثیت میں طلب کرتے ہوئے حکم دیا کہ ضابطہ فوجداری دفعہ 342 کے تحت پرویز مشرف بیان ریکارڈ کرائیں۔

Mostly sunny

20°C

اسلام آباد

Mostly sunny
Humidity: 41%
Wind: W at 6.44 km/h
Sunday 11°C / 20°C Mostly sunny
Monday 11°C / 20°C Sunny
Tuesday 13°C / 18°C Partly cloudy
Wednesday 11°C / 20°C Sunny
Thursday 10°C / 20°C Sunny
Friday 11°C / 17°C Sunny
Saturday 12°C / 17°C Sunny

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ