ہیڈلائنز


قومی خزانے سے لوٹی گئی رقم کی رضاکارانہ واپسی کی پیشکش قبول

Written by | روزنامہ بشارت

نیب متعلقہ عدالت کی منظوری سے لوٹی گئی رقم کی رضاکارانہ واپسی کی پیشکش قبول کر سکے گا جبکہ عوامی عہدیدار یا کوئی بھی شخص لوٹی گئی رقم بمعہ منافع جمع کرائے گا جس کے بعد ملزم کیخلاف مقدمہ ختم اور اُسے رہا کردیا جائے گا تاہم کیس ختم ہوجانے کے بعد بھی جرم کرنے والا عوامی عہدیدار، شخص سزا یافتہ ہی کہلائے گا اور عوامی عہدہ رکھنے کیلئے بھی نااہل ہوگا۔

مجوزہ بل کے مندرجات کے مطابق سروس آف پاکستان، خودمختار باڈی، تنظیم ، ادارے،وفاقی و صوبائی حکومت کا جو بھی ملازم بدعنوانی کا مرتکب پایا گیا اسے فوری طور پرملازمت سے ہٹادیا جائے گا اور وہ کسی بھی قسم کی مالی مراعات بھی حاصل نہیں کرسکے گا نہ ہی دوبارہ کوئی عوامی عہدہ رکھنے کا مجاز ہوگا۔نیب وصول کی گئی رقم30دن کے اندر منافع سمیت متعلقہ وفاقی، صوبائی حکومت یا متعلقہ ادارے یا تنظیم ،کمپنی یا متعلقہ شخص کو منتقل کرنے کا پابند ہوگا۔

لوٹی گئی رقم کی رضاکارانہ واپسی کے حوالے سے پہلے سے موجود احتساب قانون کی شق25(a) کیخلاف سپریم کورٹ میں ازخود نوٹس کیس بھی زیر التواہے ۔ نئے مجوزہ ایکٹ میں شق20 لوٹی گئی رقوم کی رضاکارانہ واپسی سے متعلق ہے۔

اٹارنی جنرل کے مطابق حکومت نیب آرڈیننس میں ترمیم لارہی ہے اوروہ ذاتی طور پر پلی بارگین کے قانون کے حق میں ہیں۔ ملک بھر میں تقریباً 1500 پلی بار گین کے کیسز ہیں ،ان کا کہنا تھا کہ چاروں صوبوں میں رضاکارانہ واپسی کے قانون سے فائدہ اٹھانے والوںکی تعداد 1884ہے۔

 

Mostly cloudy

12°C

اسلام آباد

Mostly cloudy
Humidity: 50%
Wind: NNW at 11.27 km/h
Friday 11°C / 19°C Partly cloudy
Saturday 11°C / 21°C Mostly sunny
Sunday 13°C / 20°C Partly cloudy
Monday 12°C / 18°C Sunny
Tuesday 11°C / 19°C Sunny
Wednesday 11°C / 17°C Sunny
Thursday 10°C / 18°C Sunny

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ