ہیڈلائنز


مودی پاکستان کےسخت مخالف ہے،بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینا چاہیئے،مشرف

Written by | روزنامہ بشارت

                                      اسلام آباد(آئی این پی) آل پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ‘ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف نے کہا ہے کہ نریندر مودی پاکستان کے سخت مخالف ہیں‘ پاکستان کو بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینا چاہئے‘ لائن آف کنٹرول پر حملہ مادر وطن پر حملہ ہے‘ حکومت ذاتی مفاد کی جگہ قومی مفاد کو ترجیح دے‘ ہمارا ملک طاقتور ہے اس کے باوجود حکومت کی کمزوری سمجھ سے بالاتر ہے‘میرے دور کو کسی

کے مقابل سمجھنا قابل توہین ہے‘ این آر او کا میرا فیصلہ غلط تھا‘ لال مسجد کا فیصلہ درست تھا‘ بینظیر واقعہ میں میری کوئی غلطی نہیں تھی‘ میں نے آنے سے منع کیا تھا‘ کرپٹ حکمرانوں کا احتساب ہونا چاہئے‘ میرے دور میں کابینہ سے مشاورت کے بغیر کوئی فیصلہ نہیں ہوتا تھا‘ عمران خان کا کرپٹ حکمرانوں کو لٹکانے کا آسان نہیں۔ وہ اتوار کو نجی ٹی وی سے گفتگو کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی اور فائرنگ مادر وطن پر حملہ ہے اس پر وزیراعظم کو بولنا چاہئے اور اینٹ کا جواب پتھرسے دینا چاہئے کیونکہ آئندہ بھارت کہوٹہ پر بھی حملہ کرسکتا ہے۔ حکومت کوئی خاص جواب نہیں دے رہی اب حکومت کو ذاتی مفاد کی جگہ قومی مفاد کو ترجیح دینی چاہئے اور بھارتی جارحیت کا جواب دے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا ملک طاقتور ہے اور ہم غیرت والے لوگ ہیں۔ یہ بات ٹھیک ہے کہ ہمیں انڈیا سے تعلقات رکھنے چاہئیں لیکن یہ بھی سوچنا چاہئے کہ نریندر مودی مسلمانوں کیخلاف ہیں اور ان کی سوچ کیا ہے۔ وزیراعظم نواز شریف کو نریندر مودی سے ملنے انڈیا نہیں جانا چاہئے تھا۔ مجھے تو حکومت کی کمزوری سمجھ سے بالاتر لگتی ہے۔ سابق صدر نے کہا کہ اندرونی طور پر کمزور ہونے سے دو ٹوک ڈپلومیسی نہیں اپنائی جاسکتی کیونکہ اس میں بھی پھر کمزور ہوجاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں نے سپریم کورٹ کے قوانین کے تحت سینئر ترین جج کو چیف جسٹس بنایا تھا اور اس کیلئے میں نے جوڈیشل کونسل کو صحیح ریفرنس بھی بھیجا تھا۔ پرویز مشرف نے کہا کہ میرے دور کو کسی کے تقابل سمجھنا میری توہین ہے۔ میرے اور بعد کے پانچ سال میں مماثلت نہیں کی جاسکتی۔ میں نے ملک کو عزت اور رتبہ دیا لیکن میرے دور کی سب سے بڑی ناکامی این آر او تھا جسے میں خود بھی غلط سمجھتا تھا لیکن معلوم نہیں اس کے باوجود کیسے ہوگیا۔ لال مسجد آپریشن درست فیصلہ تھا لیکن لوگوں نے اسے سیاسی طور پر استعمال کیا۔ کیا یہ عوام کی بہتری کیلئے تھا۔ انہوں نے کہا کہ بینظیر بھٹو کو وطن واپس آنے دینا میری غلطی نہیں تھی۔ میں نے انہیں آنے سے منع کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ میرے دور میں کابینہ کے مشورے کے بغیر کوئی کام نہیں ہوتا تھا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سیاست میں آنے والا ہر آدمی یہ کہتا ہے کہ میں کڑا احتساب کروں گا میں نے بھی زرداری کا احتساب کرانے کیلئے جنیوا میں پیغام بھیجا تھا لیکن کچھ بھی نہ ہوسکا اور اب عمران خان بھی کہتے ہیں کہ کرپٹ سیاستدانوں کو لٹکادوں گا لیکن فیلڈ میں آکر کچھ کرنا بہت مشکل ہے یہ اتنا آسان نہیں۔  

Mostly cloudy

13°C

اسلام آباد

Mostly cloudy
Humidity: 53%
Wind: NNW at 11.27 km/h
Monday 10°C / 19°C Mostly cloudy
Tuesday 11°C / 20°C Mostly sunny
Wednesday 13°C / 20°C Sunny
Thursday 10°C / 18°C Sunny
Friday 9°C / 17°C Sunny
Saturday 9°C / 15°C Partly cloudy
Sunday 11°C / 16°C Mostly cloudy

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ