ہیڈلائنز


قندیل بلوچ کے گھر والوں کو اس کے قاتل بھائی کو معاف کرنے کی اجاز ت نہیں دی جائے گی

Written by | روزنامہ بشارت

اسلام آباد: پاکستانی حکام نے معروف ماڈل اور سوشل میڈیا کی زینت بنی رہنے والی قندیل بلوچ کے گھر والوں کو اس بات کی اجازت دینے سے انکار کر دیا کہ وہ ناموس کے نام پر اسے قتل کرنے والے بھائی وسیم کو معاف کر دیں۔
وسیم نے گذشتہ جمعہ کو اپنی بہن قندیل بلوچ کو گلا گھونٹ کر مار ڈالا تھا۔پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ قندیل بلوچ کو قتل کرنے کے لیے کسی نے اسے نہیں اکسایا۔پولیس نے مزید کہا کہ ملزم کا ڈی این اے ٹیسٹ کروا لیا گیا ہے کیونکہ قندیل بلوچ کے چہرے پر ناخنوں کے نشانات ہیں اور اب ملزم کے ڈی این اے کا ان ناخنوں کے ساتھ تقابل کیا جائے گا تاکہ پتہ چل سکے کہ قتل کی اس واردات میں کوئی دوسرا تو ملوث نہیں ہے۔
پنجاب پولیس نے قندیل بلوچ کے قتل کے مقدمے میں غیرت کے نام پر قتل کیے جانے کی دفعہ بھی شامل کر لی ہے جس کے تحت مدعی ملزمان کے ساتھ سمجھوتہ نہیں کر سکتا۔پولیس نے کہا کہ اس مقدمے سے متعلق عدالت ہی میں فیصلہ ہو گا اور مدعی مقدمہ اس میں ملوث ملزمان کو اپنے طور پر معاف نہیں کر سکے گا۔
انھوں نے کہا کہ قندیل بلوچ کے قتل کے مقدمے میں مفتی عبدالقوی کو بھی شامل تفتیش کیا جائے گا اس کے علاوہ دیگر افراد بھی شامل تفتیش کیے جائیں گے۔ انھوں نے کہا کہ قندیل بلوچ نے اپنی زندگی کے آخری دنوں میں مفتی عبدالقوی کے ساتھ ٹاک شوز بھی کیے تھے جس سے تنازع اٹھ کھڑا ہوا تھا۔ انھوں نے کہا کہ ان دو افراد کو بھی شاملِ تفتیش کیا گیا ہے جو وقوعے کے بعد ملزم کو ڈیرہ غازی خان لے گئے تھے۔
پولیس کا کہنا ہے کہ اس مقدمے میں تمام پہلوؤں کا جائزہ لیا جائے گا تاکہ حقائق اور محرکات کو سامنے لایا جا سکے۔انھوں نے کہا کہ مقتولہ کے زیر استعمال موبائل کا ڈیٹا بھی حاصل کر لیا گیا ہے جس کے بعد اس مقدمے کی تفتیش کا دائرہ کار بڑھا دیا گیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ قندیل بلوچ کے قتل میں دو محرکات ہیں۔ ایک کا تو ملزم نے اعتراف بھی کیا ہے کہ اس نے غیرت کے نام پر قتل کیا ہے اور دوسرا محرک پیسوں کا تھا۔
مقتولہ جو بھی پیسے کما کر لاتی تھی وہ اپنے والدین کو دیتی تھی جس کا ملزم کو رنج تھا کہ وہ اسے کیوں پیسے نہیں دیتی۔خیال رہے کہ پاکستان میں غیرت کے نام پر ہر سال تقریبا پانچ سو افراد کو قتل کردیا جاتا ہے جن میں سے تقریبا سبھی خواتین ہوتی ہیں۔
وزیر اعظم نواز شریف نے گذشتہ فروری میں اس کے خلاف ایک قانون لانے کا وعدہ کیا تھا لیکن حقوق انسانی کے گروپوں کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں ابھی تک کوئی پیش رفت نہیں ہوئی ہے۔

Clear

18°C

اسلام آباد

Clear
Humidity: 41%
Wind: NNW at 11.27 km/h
Wednesday 20°C / 29°C Sunny
Thursday 20°C / 29°C Sunny
Friday 20°C / 29°C Sunny
Saturday 21°C / 29°C Sunny
Sunday 21°C / 27°C Sunny
Monday 19°C / 25°C Scattered thunderstorms
Tuesday 18°C / 25°C Sunny

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ