ہیڈلائنز


سندھ میں ایک آدمی کو نوازنے کیلئے 15 لوگوں کے حقوق پر ڈاکہ ڈالا جاتا ہے، چیف جسٹس

Written by | روزنامہ بشارت

اسلام آباد: چیف جسٹس انورظہیرجمالی نے ایک مقدمے کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے ہیں کہ سندھ میں ایک آدمی کو نوازنے کے لیے 15 لوگوں کے حقوق پرڈاکہ ڈالا جاتا ہے۔ چیف جسٹس انورظہیرجمالی کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے سندھ میں افسران کی ڈیپوٹیشن کے کیس کی سماعت کی، سماعت کے دوران سپریم کورٹ ایک بارپھرسندھ حکومت پربرس پڑی۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سندھ میں گریڈ ایک کے ملازم کو گریڈ سولہ پر تعینات کر دیا گیا، جب پسند نا پسند پر تقرری ہو گی تو گڈ گورننس کہاں رہے گی، ایک شخص کو نوازنے کے لئے پندرہ کی حق تلفی کی جاتی ہے، انہیں سپریم کورٹ میں آئے سات سال ہو گئے لیکن سندھ حکومت کا یہی رویہ ہے، ہر سماعت پر عدالت کو ٹالنے کی کوشش کی جاتی ہے، تین تین سال تک عدالت کے فیصلے پرعمل نہیں کیا جاتا، بیان جاری کردیں کہ سندھ میں جمہوریت نہیں بادشاہت ہے اور وزیراعلیٰ سندھ کسی قانون کے پابند نہیں۔ سپریم کورٹ نے چیف سیکرٹری سندھ سے ایک ہفتے میں عدالتی فیصلے پرعمل نہ کرنے والوں کے نام طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

Sunny

18°C

اسلام آباد

Sunny
Humidity: 35%
Wind: NNW at 17.70 km/h
Sunday 10°C / 18°C Sunny
Monday 12°C / 16°C Sunny
Tuesday 8°C / 14°C Rain
Wednesday 6°C / 15°C Sunny
Thursday 6°C / 15°C Sunny
Friday 10°C / 14°C Sunny
Saturday 11°C / 15°C Sunny

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ