ہیڈلائنز


قانون توڑنے پر کارروائی ہوگی، دھرنا مظاہرین سے کوئی تحریری معاہدہ نہیں ہوا، چوہدری نثار

Written by | روزنامہ بشارت

اسلام آباد: ڈی چوک پر آئندہ کسی بھی مذہبی یا سیاسی جماعت کے احتجاج یا جلسے پر پابندی عائد کر دی گئی، چوہدری نثار علی خان کہتے ہیں قانون کو ہاتھ میں لینے والوں کیخلاف کارروائی ہوگی، دھرنا مظاہرین سے کوئی تحریری معاہدہ نہیں ہوا، اسلام آباد اور راولپنڈی سے ایک ہزار سے زائد افراد کو گرفتار کیا گیا، توڑ پھوڑ اور جلاؤ گھیراؤ میں ملوث افراد کیخلاف قانونی کارروائی ہوگی، جس نے توڑ پھوڑ نہیں کی، اسے رہا کر دیا جائے گا۔ وفاقی وزیر داخلہ نے دھرنا ختم کرانے میں کردار ادا کرنے والے علمائے کرام کا شکریہ بھی ادا کیا۔ وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد کی طرف مارچ سے ملک کی بدنامی ہوئی، ریڈ زون کو جلسہ گاہ بنا دیا گیا، آئندہ کسی بھی سیاسی و مذہبی جماعت کو ڈی چوک پر احتجاج، دھرنے اور جلسے کی اجازت نہیں ہوگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج 5 بجے آپریشن کا فیصلہ ہوگیا تھا، قابل احترام شخصیات کی وجہ سے مذاکرات کئے، دھرنا ختم کرانے میں کردار ادا کرنیوالے اکابرین کا شکریہ ادا کرتا ہوں، دھرنا مظاہرین سے کوئی تحریری معاہدہ نہیں ہوا۔ چوہدری نثار نے مزید بتایا کہ اسلام آباد اور راولپنڈی سے ایک ہزار 70 افراد کو حراست میں لیا گیا، مشتعل افراد نے سرکاری املاک کو نقصان پہنچایا، کیمرے توڑے، فائر بریگیڈ سمیت کئی گاڑیوں کو نذر آتش کیا، قانون کو ہاتھ میں لینے والوں کیخلاف کارروائی ہوگی، جو توڑ پھوڑ میں ملوث نہیں انہیں رہا کر دیا جائے گا۔ وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ ایسے اقدامات کئے جائیں گے، جس سے وفاقی دارالحکومت میں پولیس کو رٹ قائم کرنے میں مدد ملے، معاملے کو پارلیمنٹ میں اٹھائیں گے۔

دیگر ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اسلام آباد کی جانب مارچ کرنے سے کسی کی نیک نامی نہیں ہوئی۔ ریڈ زون میں آنے والے حکومت اور ریاست کو یرغمال بنا لیتے ہیں۔ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ آئندہ کسی مذہبی یا سیاسی جماعت کو ڈی چوک اور ریڈ زون میں جلسہ اور دھرنا دینے کی اجازت نہیں ہوگی۔ جلسے پر پابندی کیلئے پارلیمنٹ سے منظوری لی جائے گی۔ وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ مظاہرین کے ساتھ کسی قسم کا کوئی تحریری معاہدہ نہیں ہوا۔ حکومت کے کسی نمائندے کو مظاہرین کے ساتھ معاہدے کا اختیار ہی نہیں تھا۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ آج شام پانچ بجے تک دھرنے کیخلاف آپریشن کا فیصلہ ہوچکا تھا۔ تاہم آپریشن کے فیصلے کے بعد کچھ قابل احترام لوگ آئے۔ مذاکرات میں کچھ پس پردہ قابل احترام شخصیات بھی شریک تھیں۔ دھرنا ختم کروانے کیلئے دو قابل احترام شخصیات کراچی سے آئیں۔ چوہدری نثار علی خان کا کہنا تھا کہ دھرنے کے شرکاء کو روکنے میں ناکامی کی تحقیقات کا حکم دیدیا ہے۔ مظاہرین پر درج کئے گئے مقدمات بہت سخت ہیں۔ قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کیخلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت 1070 افراد گرفتار ہیں۔ ان افراد میں سے جو لوگ توڑ پھوڑ، جلاؤ گھیراؤ اور انتشار پھیلانے میں ملوث نہ ہوئے انہیں تحقیقات کے بعد رہا کر دیا جائے گا۔

Clear

27°C

اسلام آباد

Clear
Humidity: 80%
Wind: N at 6.44 km/h
Saturday 25°C / 30°C Thunderstorms
Sunday 23°C / 29°C Thunderstorms
Monday 22°C / 28°C Thunderstorms
Tuesday 23°C / 28°C Thunderstorms
Wednesday 23°C / 28°C Thunderstorms
Thursday 22°C / 26°C Thunderstorms
Friday 21°C / 26°C Thunderstorms

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ