ہیڈلائنز


پاکستان میں پروسٹیٹ کینسر پروان چڑھ رہا ہے

Written by | روزنامہ بشارت

اسٹیسٹ کی قیمت پاکستانی 30 ہزار روپے کے لگ بھگ ہے اور اسے برطانیہ کے پرائیویٹ اسپتالوں میں انجام دیا جارہا ہے،پیشاب کے اس ٹیسٹ میں دو عدد بایومارکرز کو کامیابی سے شناخت کیا جاسکتا ہے۔

ہرسال برطانیہ میں 10 ہزار افراد پروسٹیٹ کینسر سے موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔ پروسٹیٹ کینسر کو ابتدا میں شناخت کرنا مشکل ہوتا ہے۔ بار بار پیشاب آنا اور اسے روکنا مشکل ہوجانا اس کی اولین نشانی ہے اوراس کا مطلب ہے کہ رسولی اتنی بڑی ہوگئی ہے کہ وہ پیشاب کی نالی پر زور ڈال رہی ہے، اس موقع پر مریض کو ڈاکٹر سے رجوع کرنا ضروری ہوجاتا ہے۔

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ