ہیڈلائنز


احمد بٹ سے طلاق کیوں لی

Written by | روزنامہ بشارت

 گلوکارہ حمیرا ارشد نے کہا ہے کہ احمد بٹ اب جو مرضی کر لے اس کی بلیک میلنگ میں نہیں آؤں گی ،میرا کردار برا تھا اور میں منشیات استعمال کرتی تھی تو 13سال بعد اس کا خیال کیوں یاد آیا ؟

تفصیلات کے مطابق سیشن کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حمیرا ارشد کا کہنا تھا کہ میرا کردار کیا ہے ؟ وہ کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے۔ حمیرا ارشد نے کہا کہ دنیا میں تماشہ نہ بنے اس لئے احمد بٹ کو ہر بار پیسے دئیے اور اس کے تمام چیکس اور معاہدوں کی دستاویزات عدالت میں جمع کرا دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں نے بچے کو پیدا کیا ہے اور اس پر میرا حق ہے اسے حاصل کرنے کے لئے آخری حد تک جاؤں گی ، حمیرا ارشد نے کہا کہ احمدنے پہلے بھی تماشہ کیا اور میں نے اسے روکنے کیلئے احمد کو پیسے دئیے ۔ بیوی ہونے کے باوجود احمد مجھے بلیک میل کرتا تھا، یہاں تک کہتا تھا کہ جائیداد اور کاروبار میرے نام لگا دو ۔ میں نے اپنی سرمایہ کاری سے

احمد بٹ کو کیفے ، پالر اور پروڈکشن ہاؤس کھول کر دیا لیکن احمد بٹ نے خود ہی ان کارباروں میں چوری کرکے پیسے نکالنا شروع کر دیئے۔ اب بھی احمد بٹ کو اتنے پیسے دئیے جتنے اس نے مانگے صرفاس لیے کہ بچے کی چھینا چھپٹی نہ ہو لیکن اس کے باوجود بچے کو چھین لیا گیا ۔ حمیرا ارشد نے کہا اب جو مرضی ہو جائے میں بلیک میلنگ میں نہیں آؤں گی ۔ میری کردار کشی کرتے ہوئے یہ خیال بھی نہیں آیا کہ میں نے ان کی تیرہ سال خدمت کی ہے انہیں پیار کیا لیکن مجھے بلیک میل کرنے کے لئے کردار کشی کی جارہی ہے ۔ اگر میرا کردار برا تھا اور میں منشیات استعمال کرتی تھی تو احمد کو 12،13سال بعد اس کا خیال کیوں آیا؟ طلاق کے بعد ایسی باتیں کرنے کا کیا مقصد ہے؟ یہ بھی نہیں سوچا گیا کہ میں علیحدگی کے بعد بھی اس کے بچے کی ہمیشہ ماں تو رہوں گی ۔ بچے کے منہ سے کہلوایا گیا کہ میری ماں بری ہے جب وہ بڑا ہو گیا تو کیا وہ اپنے باپ سے نہیں پوچھے گا کہ اس کے منہ سے کیا کہلوایا گیا تھا؟ میں 15سال سے شوبز میں ہوں اور میرا کردار کسی سے ڈھکا چھپا نہیں،میں کئی سالوں سے ملک کی خدمت کررہی ہوں اور کبھی ایسا کوئی کام نہیں کیا جس سے میری ذات یا میرے ملک کی عزت پر کوئی حرف آئے۔میرا کردار کیسا ہے سب میڈیا والے اس سے آگاہ ہیں لیکن احمد بٹ کے کریکٹر کی باتوں سے میڈیا آگاہ نہیں ہے

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ