ہیڈلائنز


ایان علی کے مقدمے میں اہم حکومتی شخصیات کی آف شورکمپنیوں کے معاملے کی گونج،عدالت نے حکم جاری کردیا

Written by | روزنامہ بشارت

کراچی: ایان علی کے مقدمے میں اہم حکومتی شخصیات کی آف شورکمپنیوں کے معاملے کی گونج،عدالت نے حکم جاری کردیا،ماڈل ایان علی کے وکیل لطیف کھوسہ نے کہا کہ حکومتی وزراء اور ان کے بچوں کے اربوں، کھربوں روپے آف شور کمپنیوں میں لگائے ہوئے ہیں۔ اس پر کوئی نہیں پوچھتا ہے۔ جس پرعدالت نے ایان علی کے وکیل کو مکمل دستاویزات ڈپٹی اٹارنی جنرل کو فراہم کرنے کا حکم جاری کردیا،سندھ ہائی کورٹ نے ماڈل ایان علی کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے سے متعلق توہین عدالت کیس کی سماعت16 مئی تک ملتوی کر دی ہے جبکہ عدالت نے ایان علی کے وکیل کو مکمل دستاویزات ایڈیشنل ڈپٹی اٹارنی جنرل کو فراہم کرنے کاحکم بھی دیا ہے۔ماڈل ایان علی کو ان کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے لیے مزید دو ہفتے انتظار کرنا پڑے گا۔بدھ کوسندھ ہائی کورٹ میں ماڈل ایان علی کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے سے متعلق توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی۔وفاقی حکومت نے جواب سندھ ہائی کورٹ میں جمع کروا دیا۔ ایڈیشنل ڈپٹی اٹارنی جنرل سلمان طالب الدین نے اپنے دلائل میں کہا کہ ایان علی کا نام عدالتی احکامات پر ای سی ایل سے خارج کر دیا تھا۔ نئے میمورینڈم اور نئے الزامات کے تحت ایان علی کا نام دوبارہ ای سی ایل میں شامل کیا گیا۔ ایان علی کی جانب سے سندھ ہائی کورٹ میں دائر درخواست غیر موثر ہے۔ماڈل ایان علی کے وکیل لطیف کھوسہ نے کہا کہ حکومتی وزراء اور ان کے بچوں کے اربوں، کھربوں روپے آف شور کمپنیوں میں لگائے ہوئے ہیں۔ اس پر کوئی نہیں پوچھتا ہے۔ جس پرعدالت نے ایان علی کے وکیل کو مکمل دستاویزات ڈپٹی اٹارنی جنرل کو فراہم کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 16 مئی تک ملتوی کر دی۔

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ