ہیڈلائنز


خراب آئی فون دینے پر کمپنی پر مقدمہ درج

Written by | روزنامہ بشارت
بھارت کے شہر حیدرآباد کے ایک وکیل نے امریکی کمپنی ’ایپل‘ کے خلاف مقدمہ دائر کردیا جس میں انہوں نے کمپنی کی جانب سے خراب آئی فون دینے کی شکایت کرتے ہوئے ایک لاکھ روپے زرتلافی ادا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔
 
میڈیا رپورٹس کے مطابق حیدرآباد کے رہائشی بی ایس پرساد نے کچھ عرصے قبل آئی فون 6 خریدا تھا تاہم کچھ ہی دنوں بعد موبائل نے کام کرنا چھوڑ دیا، انہوں نے پہلے کمپنی سے رجوع کیا تاہم کمپنی کی جانب سے تعاون نہ کیے جانے پر انہوں نے حیدرآباد کی مقامی عدالت سے رجوع کرلیا۔
 
اپنی درخواست میں پرساد نے موقف اپنایا کہ انہوں نے ہیلپ لائن پر کمپنی کو اپنی پریشانی سے آگاہ کیا جس پر انہیں بنجارا ہلز میں ایپل کے قریبی سروس سینٹر سے رابطہ کرنے کا کہا گیا لیکن وہاں پہنچنے پر ان کی کسی قسم کی شنوائی نہیں ہوئی اور سروس سینٹر کے عملے نے اس بات کا اعتراف کیا کہ انہیں دیا جانے والا سیٹ خراب تھا لیکن اس کے باوجود انہوں نے سیٹ تبدیل کرنے سے انکار کیا۔
 
وکیل نے اپنی درخواست میں یہ بھی کہا کہ خراب فون دینے کے باوجود موبائل تبدیل کرنے کے بجائے انہیں 15 دن کا وقت دیا گیا اور کہا گیا کہ یہ موبائل بنگلور بھیجا جائے گا جہاں اس مسئلے کو حل کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ دوبارہ کمپنی کسٹمر سپورٹ سینٹر سے رابطہ کرنے پر انہیں کچھ پروگرامز انسٹال کرنے کا کہا گیا مگر وہ بھی بے سود رہا۔ آخر میں انہیں موسارام باغ میں ایک اور کسٹمر سینٹر سے رابطہ کرنے کی ہدایت کی گئی۔
 
درخواست گزار کا کہنا تھا کہ کمپنی کی جانب سے اتنا پریشان کیے جانے کے بعد انہوں نے ایپل کو قانونی نوٹس بھیجنے کا فیصلہ کیا جس میں انہوں نے کہا کہ انہیں نیا موبائل دیا جائے یا پھر ان کی 30 ہزار 700 روپے کی رقم 24 فیصد سود کے ساتھ واپس کی جائے۔ انہوں نے کمپنی سے ایک لاکھ روپے کی زرتلافی ادا کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ایپل کی جانب سے خراب فون دینے کی وجہ سے انہیں پریشانی کا سامنا کرنا پڑا اور انہیں شدید ذہنی صدمہ پہنچا جس کی تلافی ہونی چاہیے۔

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ