ہیڈلائنز

Reporter FK

Write on اتوار, 21 مئی 2017

 کراچی : مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ ظالموں کا مقابلہ کرنا اور مظلومین کا ساتھ دینا ہماری ذمہ داری ہے، دنیا پر اس وقت سب سے بڑا شیطان امریکہ مسلط ہے ،دنیا میں کتنی جنگیں شروع کیں لاکھوں بے گناہ عوام کاقتل عام کیا، امریکی نظام حکومت دنیا کو تباہ و برباد کررہا ہے، جہاں پر ظلم ، کرپشن ہے اُس کے پیچھے امریکہ ہے، پاکستان کی عوام مجبور ہیں کیونکہ یہ نظام امریکی نظام ہے ہمارے ملک کے حکمران اور منافقین امریکہ کے ساتھ ہیں، ظہور امام کا دشمن امریکہ، اسرائیل اور آل سعود ہے، پاکستان کو یمن، بحرین اور شام کی طرح کمزور کرنا چاہتے ہیں، آل سعود اور امریکہ یمن کے اندر گھٹنے ٹیکنے پر مجبور ہوچکا ہے، کیونکہ یمن کی عوام نے حق کا ساتھ اور استقامت نہیں چھوڑی، پاکستان کو ایک نئے دلدل میں لے جاناچاہتے ہیں، ضیاء الحق جنگ کو ملک کے اندر لے کر آیا ،ملک کو تباہ وبرباد کیا اور تکفیریت کو پروان چڑھایا،اب پاکستان کو آل سعود کے الائنس میں لے جارہا ہے یہہ ہمارے ملک ، فوج اور عوام کے دشمن ہیں، ہماری فوج کو تقسیم کرنے کے لیے اس الائنس میں شامل کیا گیا ہے، پاکستان کے حکمران ہوش کے ناخن لیں ، ہم پاکستان کی جانب سے 39ممالک کے الائنس میں جانے کی مخالفت کرتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے مجلس وحدت مسلمین سندھ کے تحت نشترپارک کراچی میں منعقدہ استحکام پاکستان اور امام مہدی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، کانفرنس سے وحدت مسلمین کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل علامہ حسن ظفری نقوی ، علامہ احمد اقبال رضوی ، علامہ امین شہیدی مجلس علمائے شیعہ پاکستان کے سربراہ علامہ مرزا یوسف حسین ، علامہ مختارامامی ، مقصود علی ڈومکی ، علامہ علی رضوی ، علامہ باقر عباس زیدی ، علامہ اقتدار حسین نقوی ، علامہ اقبال بہشتی ، علامہ ظہیر الحسن ، علامہ برکت علی مطہری ، علامہ طالب حسین ہمدانی ، علامہ مبشر حسن اور علی حسین نقوی سمیت دیگر نے خطاب کیا ، کانفرنس کے دوسرے سیشن میںولادت حضرت امام مہدی کی مناسبت سے جشن کا انعقاد بھی کیا گیا جس سے علامہ اعجاز بہشتی ، ڈاکٹر ماجد رضا عابدی سمیت دیگر مقررین نے خطاب کیا جبکہ شعرائے کرام نے بارگاہ امامت میں نذرانہ عقیدت پیش کیا۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ہمارے اوپر حملے کیئے جاتے ہیں کیونکہ ہم اس ملک کی سلامتی کے لیے لڑتے ہیں، انہوں نے کہا کہ قوم کے قاتلوں کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے، دہشتگردوں کے کیس کو فوجی عدالتوں میں لے جایا جائے، ہمیں اُمید تھی کہ قاتلوں کو سزا ہوگی لیکن افسوس کہ تکفیریوں کو رعایت دی گئی، ہمارے حکمران اور ریاستی عدالتیں سب خاموش ہیں ، ہم مایوس نہیں ہوں گے، علامہ راجہ ناصرعبا س نے کہا کہ ملک بھر میں ہمارے جوانوں کو گرفتار کیا جارہا ہے، خواتین کی بے حرمتی اور چادر وچاردیواری کے تقدس کو پامال کیا جارہا ہے، انہوں نے مطالبہ کیا کہ ریاستی ادارے ہمارے لاپتہ افراد کو بازیاب کرائیں ، اگر اُن کا کوئی گناہ ہے تو عدالت میں پیش کیا جائے، یہ ظلم اب رکنا چاہیے، مجلس وحدت کے سربراہ نے کہا کہ مجھے پاکستان کی بااختیار عدالتوں ، آرمی چیف، چیف جسٹس سے اُمید ہے کہ لاپتہ افراد کے حوالے سے کارروائی کی جائے گی ۔

علامہ راجہ ناصر نے کہا کہ عزاداری ہماری شہ رگ حیات ہے ملک بھر میں جلوس عزاء اور مجالس پر پابندی کسی صورت برداشت نہیں کریں گے، نیشنل ایکشن پلان غلط سمت میں جارہا ہے،انہوں نے کہا کہ جن دہشت گردوں نے پاکستان کے استحکام کو داو پر لگایا اور ریاستی اداروں ہمارے قانون نافذکرنے والے اداروں کے جوانواں اور ہزاروں پاکستانیوں کا قتل کیا ان کو تحفظ فراہم کیا جارہا ہے ، انہوں نے دہشت گرد قاتل احسان اللہ احسان کو ہیروبناکرپیش کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ، علامہ راجہ ناصر نے کہا کہ ہمارے حکمران احمق ہیں یا ان کے ساتھی، ڈان نیوز لیکس کے معاملے پر نوازشریف نے ملکی سلامتی کو داو پر لگایا ہے وہ فوری طور پراستعفی دیں، ہماری خارجہ پالیسی امریکہ، اسرائیل اور آل سعود چلارہے ہیں، ہم کسی ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات خراب نہیں ہونے دیں گے، ملک کو آل سعود کے ہاتھوں نہیں بیچنے دیں ، پاکستان میںظالم حکمرانوں کا راستہ روکنا ہے ، انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اپنے ووٹ کا شعوری استعمال کریں اور آنے والے الیکشن میں اُس شخص کو ووٹ دیں جو بھارت، اسرائیل ، امریکہ اور آل سعود کے خلاف ہو۔

آخر میں انہوںنے لاپتہ شیعہ افراد کی بازیابی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ وزیر داخلہ اگر شیعہ جوانوں کو بازیاب نہیں کرواسکتے تو استعفیٰ دیدیں۔

Write on اتوار, 21 مئی 2017

حیدرآباد: ایم کیو ایم پاکستان کی حقوق ریلی میں ایک بار پھر بانی متحدہ کے نعرے لگ گئے۔

تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم پاکستان کی جانب سے حیدرآباد میں حقوق ریلی کا اہتمام کیا گیا، جس  کی قیادت سربراہ متحدہ پاکستان ڈاکٹر فاروق ستار نے کی۔

ریلی کا آغاز سٹی گیٹ سے ہوا اور وہ اپنے مقررہ راستوں سے ہوتی ہوئی کوہ نور چوک پر اختتام پذیر ہوئی، حیدرآباد کے مسائل کے لیے نکالی ناجے والی ریلی میں سینٹر عبد الحسیب دلاور قریشی رعنا انصار سمیت مرکزی قیادت اور مقامی عہدیداران نے شرکت کی۔

حیدرآباد روڈ پر ایم کیو ایم پاکستان کی ریلی پہنچی تو وہاں موجود شرکاء نے بانی ایم کیو ایم کے حق میں شدید نعرے بازی کی، اس موقع پر ڈاکٹر فاروق ستار اور میئر کراچی وسیم اختر بھی موجود تھے۔

 مظاہرین کی جانب سے تین مقامات پر بانی ایم کیو ایم کے حق میں نعرے بازی کی گئی علاوہ ازیں ڈاکٹر فاروق ستار کی گاڑی جس مقام سے بھی گزری وہاں پر مظاہرین نے بانی ایم کیو ایم کے حق میں نعرے لگائے۔

ویڈیو دیکھیں

Write on اتوار, 21 مئی 2017

 سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کا کہنا ہے کہ ایران دہشت گردی کا مرکز بنا ہوا ہے اور وہ دیگر ممالک کے معاملات میں مداخلت کر رہا ہے جو عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے جب کہ ایران نے ہماری خاموشی کو کمزوری سمجھا۔

امریکا عرب اسلامی سربراہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کا کہنا تھا کہ امریکا اوراسلامی دنیا کے درمیان یہ سربراہ اجلاس انتہائی اہمیت کا  حامل ہے، اسلام  امن کا پیغام دیتا ہے اور بے گناہ کو مارنا پوری انسانیت کو مارنے کی طرح ہے، دہشت گردوں نے مسلمانوں کے قبلے کو نشانہ بنانے کی سازش کی لیکن بدی کی طاقتیں جہاں بھی ہوں ان کے خلاف متحد رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے  خاتمے کے لیے ایک سینٹر بنانے کا فیصلہ کیا اور اسلامی عسکری اتحاد دہشت گردی کو شکست دینے کے لیے بنایا گیا ہے، امید کرتے ہیں دیگرممالک بھی اس اتحاد میںٕ شامل ہوں گے۔

شاہ سلمان کا کہنا تھا کہ ایران دہشت گردی کا مرکز بنا ہوا ہے اور وہ دیگر ممالک کے معاملات میں مداخلت کر رہا ہے جو عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے جب کہ ایران نے ہماری خاموشی کو کمزوری سمجھا۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کو دہشت گردی کا سامنا رہا ہے لیکن ہم نے دہشت گردوں کو شکست دینے میں کامیابی حاصل کی جب کہ داعش سمیت تمام دہشت گرد تنظیموں کا خاتمہ چاہتے ہیں، دہشت گردوں کی معاونت کرنے والوں کا مقابلہ کریں گے اور انہیں انجام تک پہنچائیں گے

Write on اتوار, 21 مئی 2017

حیدرآباد : سندھ ہائی کورٹ نے سانحہ حیدرآباد 1988 کے ملزمان کو عدم ثبوت اور کمزور چالان کے باعث قوم پرست رہنما ڈاکٹر قادرمگسی سمیت دیگر 40 ملزمان کو باعزت بری کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سیشن کورٹ کے بعد سندھ ہائی کورٹ نے بھی سانحہ حیدرآباد کیس کے تمام ملزمان کو باعزت بری کردیا او گواہوں کا ملزموں کوپہچاننے سے انکار، کمزور چالان اورٹھوس شواہد نہ ملنے پر حکومتی اپیل خارج کردی۔

خیال رہے کہ سانحہ حیدرآباد کیس کی پہلے سیشن کورٹ میں سماعت جہاں پولیس اس کیس میں ملزمان کے خلاف ٹھوس شواہد پیش نہ کر سکی اور ناکامی کی صورت میں سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کیا گیا تاہم سندھ ہائی کورٹ نے بھی ملزمان کوبری کردیا۔

یاد رہے 30ستمبر 1988 کو حیدرآباد کے مختلف پرہجوم مقامات پر فائرنگ کر کے صرف 15منٹ میں 250 افراد قتل کو کر دیا گیا تھا پاکستان کی تاریخ میں اتنے کم عرصے میں اتنا بڑا قتل عام پہلے کبھی نہیں ہوا تھا جہاں ہر گلی اور چوراہا خون میں ڈوب گیا تھا۔

اسپتال ہلاک اور زخمی ہونے والوں سے بھرگئے اور شہر بھر میں ایمرجنسی قائم کردی گئی تھی یہ وہ وقت تھا جب سندھ میں لسانی بنیادوں پر سیاست عروج پر تھی اور کئی بار لسانی فسادات نے صوبے میں سر اٹھایا جس میں کئی قیمتی جانیں ضائع ہوئیں۔

سانحہ حیدرآباد میں مسلح موٹرسائیکل سواروں سڑکوں ، بازاروں اور گلیوں میں نہتے اور معصوم افراد کو گولیوں کا نشانہ بنایا عینی شاہدین نے ان ملزمان کی شناخت قوم پرست رہنما ڈاکٹر قادر مگسی اور ان کے ساتھیوں کے طور پر کی، عوامی دباؤ پران کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔

دوسری جانب قوم پرست رہنما ڈاکٹر قادرمگسی نے اس واقعہ میں ملوث ہونے کی سخت الفاظ میں تردید کرتے ہوئے الزامات کو بے بنیاد اوربد نیتی پرمشتمل قراردیا تھا۔

اس واقعہ سندھ میں سندھی بولنے والے اور اردو بولنے مقامی افراد کے درمیان خلیج اور تفریق کو مزید گہرا کردیا جس نے آئندہ آنے والے سالوں میں سیاست پر دور رس اثرات چھوڑے۔

ڈاکٹر قادر مگسی نے 1982 میں لیاقت میڈیکل کالج سے ایم بی بی ایس کی ڈگری حاصل کی اور اسی کالج سے عملی سیاست کا آغاز جئے سندھ اسٹوڈیٹس فیڈریشن کے پلیٹ فارم سے کیا بعد ازاں اختلافات کے باعث علیحدگی اختیار کی اور ترقی پسند ونگ کی تشکیل دی جسے تعلیم مکمل کرنے کے بعد ترقی پسند پارٹی کے نام سے پورے سندھ میں پھیلایا۔

Write on اتوار, 21 مئی 2017
 

پاکستان سے دشمنی میں بھارت حدیں پار کرگیا، کرکٹ بورڈ اب چھوٹے میچز میں بھی اپنے کھلاڑیوں کو مقابلے سے روکنے لگا۔

بحرین میں گزشتہ دنوں ایک فیسٹیول کرکٹ میچ کا انعقاد ہوا، اس کیلیے 2 ٹیمیں مصباح ایگلز اور عرفان فالکنز کے نام سے بنائی گئیں، مقابلے سے ایک روز قبل پریس کانفرنس میں  پاکستانی مصباح الحق، سہیل تنویر، عبدالرزاق اور عمران نذیر کے ساتھ بھارت کے عرفان پٹھان بھی موجود تھے، مگر حیران کن طور پر میچ کے دن بھارتی کرکٹ بورڈ نے بغیر کوئی وجہ بتائے عرفان کا این او سی منسوخ کر دیا یوں وہ ایکشن میں دکھائی نہ دے سکے۔

ذرائع نے بتایا کہ بی سی سی آئی نہیں چاہتا تھا کہ عرفان کے پاکستانی پلیئرز کے ساتھ کھیلنے سے کوئی تنازع کھڑا ہو اس لیے انھیں روک دیا، بعد میں  بحرین ایگلز اور بحرین فالکنز کے ناموں سے ٹیمیں ایکشن میں  نظر آئیں، نیشنل اسٹیڈیم بحرین میں ٹوئنٹی 20 فیسٹیول میچ میںمصباح کی زیرقیادت ایگلز نے 69 رنز سے کامیابی حاصل کی۔فاتح الیون نے مقررہ اوورز میں 5 وکٹ پر 244 کا مجموعہ پایا، مصباح الحق نے 38 گیندوں پر 121 رنز کی طوفانی اننگز کھیلی،ان کی اننگز میں 10 چھکے شامل رہے، آل راؤنڈر شاہد خان آفریدی 49 گیندوں پر 79 رنز بنانے میں کامیاب رہے، انھوں نے 5 چھکے جڑے، ناکام ٹیم جوابی اننگز میں 4 وکٹ پر 175رنز تک محدود رہی، مارلون سموئلز نے 33 گیندوں پر 72 کی اننگز کھیل کر شائقین کو محظوظ کیا، انھوں نے6 بارگیند کو باؤنڈری لائن کے اوپر سے باہر پہنچایا۔ رانا نوید الحسن اورسہیل تنویر نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا جبکہ مصباح نے بیٹنگ کے بعد بولنگ میں بھی زور آزمایا اور7رنز کے عوض ایک شکار کیا۔

Write on اتوار, 21 مئی 2017

ریاض : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنی بیٹی اور اہلیہ سمیت وفد کے ہمرہ سعودی عرب کے دورے پر ہیں جہاں پہنچتے ہی اُنہیں سب سے پہلے سعودی عرب کا روایتی قہوہ پیش کیاگیا جبکہ سعودی شہزادے نے صدر ٹرمپ کی بیٹی کو قہوہ پینے اور اس سے متعلق عرب روایات سے آگاہ کیا ۔ 
عرب نیوز کے مطابق شہزادہ مقرن السعود نے امریکی صدر کی صاحبزادی ایوانکاٹرمپ کو کافی سے متعلق آداب سکھائے اور اس دوران ان کی ایک مختصر ویڈیو بھی سامنے آگئی جس میں شہزادہ مقرن بتارہے ہیں کہ مزید کافی پینے کا ارادہ نہ ہوتو کیسے کپ ہلایا جاتا ہے ۔ سعودی روایات کے مطابق مہمان کے کو دیاجانیوالا چھوٹا سا کپ خالی ہونے کے بعد دوبارہ بھردیا جاتاہے لیکن اگر مہمان مزید  قہوہ پینا پسند نہ کرے تواپنا کپ ہلاتا ہے یا اس پر ہاتھ رکھ دیتا ہے جس کا مطلب اس کا انکار ہوتاہے۔اس سے پہلے سعودی شاہ سلمان نے ٹرمپ کو کپ ہلا کر بتایا کہ اگر وہ مزید قہوہ نہ پینا چاہیں تو کپ کو ایسے ہلائیں مگر ٹرمپ کو شاید قہوہ بہت پسند آیا تھا، انہوں نے دوبارہ بھی قہوہ لیا

ایوانکاکو سکھائے جانیوالے آداب کی ویڈیو دیکھئے

Write on اتوار, 21 مئی 2017

ریاض : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ خدا کے نام پردہشت گردی کرنا مذہب کی توہین ہے اور ایسے دہشت گرد پوری دنیا میں پھیل چکے ہیں جو کسی خدا کی نہیں بلکہ موت کی عبادت کرتے ہیں۔

وہ ریاض میں امریکا عرب ممالک سرابراہی کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ مسلمان دہشت گرد نہیں بلکہ دہشت گردی کا سب سے زیادہ نشانہ مسلمان بنے ہیں اور دہشت گردی میں 95 فیصد نقصان مسلمانوں کا ہوا ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ مسلم ممالک انتہا پسندی کے خاتمے کیلئے آگے آئیں اورامریکہ کی مدد کا انتظار نہ کریں کیوں کہ اس جنگ میں ہم سب نے اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہے اور آج یہ فیصلہ کرلینا ہے کہ ہمیں تاریک مستقبل چاہیئے یا تابندہ مستقبل اپنے بچوں کو دینا ہے۔

انہوں نے کہ خطے میں امن اور ترقی چاہتے ہیں جس کے لیے سعودی عرب کے تعاون کئے شکرگذار ہیں جنہوں نے تمام عرب ممالک کو متحد کیا اور اپنے اتحاد سے ہی ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ جیت سکتے ہیں اس کے لیے امریکا اسلامی دنیا کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتا ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی عرب کے ویژن 2030 کی بھی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ اس میں مملکت کی ترقی و خوشحالی کو مدنظررکھا گیا ہے اورسعودی خواتین کو طاقتور بنانے کیلئے بھی احسن اقدامات کیے گئے ہیں جو لائق تحسین ہیں جس سے ایک نیا سعودیہ جنم لے گا۔

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ مشرق وسطیٰ قدرتی وسائل سے مالامال ہے اورمشرق وسطیٰ میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں نہ بننےدیں بلکہ مشرق وسطی کے مسلمان، یہودی اور عیسائی ایک ساتھ مل کر کام کریں کیوں کہ دنیا کےاربوں انسانوں کی امیدیں ہم سے جڑی ہیں دہشت گردی کی سوچ ختم نہ کی تو معصوم خون بہتا رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ انسانیت کی جائے پیدائش نشاط ثانیہ کی منتظرہے لیکن القاعدہ، داعش اورحزب اللہ دنیا کےامن کیلئےخطرہ ہے اس لیے یاد رکھیے کہ یہ جنگ مختلف مذاہب اورفرقوں کی نہیں بلکہ تہذیب اوردرندگی کی ہے اس لیے ہمیں داعش کے معاشی چینل ختم کرنے ہوں گے اورداعش کوتیل فروخت کرنے سےروکنا ہوگا۔

امریکی صدرڈونلڈٹرمپ نے اپنے خطاب میں ایران کا خاص طورپرتذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران 4 دہائیوں سے فرقہ وارانہ کشیدگی کو ہوا دے رہا ہے اور ایرانی حکومت مشرقی وسطیٰ میں عدم استحکام کی بھی ذمہ دارہے جب کہ دوسری طرف وہ لبنان، عراق، یمن میں ایران دہشت گردوں کی مالی اورعسکری مدد کررہا ہے۔

Write on اتوار, 21 مئی 2017

 کراچی : بانی ایم کیو ایم کے ریڈ وارنٹس کےمعاملے میں سندھ پولیس اور محکمہ داخلہ سندھ رکاوٹ بن گئے ہیں کیونکہ سندھ پولیس اور محکمہ داخلہ نے 2 مقدمات کے چالان کی کاپیاں روک رکھی ہیں۔ صولت مرزا اور منہاج قاضی کے بیانات کی کاپیاں بھی نہیں دی جا رہیں۔ تفصیلات کے مطابق ڈائریکٹر نیشنل سینٹرل بیورو انٹرپول نے سندھ پولیس اور محکمہ داخلہ سندھ پر اس حوالے سے اظہار برہمی کیا ہے۔ بانی ایم کیو ایم کے ریڈ وارنٹس کے اجراء کے لئے انٹرپول دو دفعہ مہلت دے چکی ہے۔ انٹرپول کی مہلت 13 جون کو ختم ہو رہی ہے۔ ڈائریکٹر نیشنل سینٹرل بیورو انٹرپول کی جانب سے تحریر کردہ مراسلے میں کہا گیا ہے کہ ہوم سیکریٹری سندھ اور آئی جی سندھ کو متعدد بار مطلوبہ کاغذات کی فراہمی کے لئے لکھا چکا ہے۔دریں اثناء، ذرائع کا کہنا ہے کہ متحدہ بانی کے ریڈ وارنٹ کیلئے وزارت داخلہ آئندہ ماہ انٹرپول کو نیا مراسلہ بھجوائے گی۔ نئے مراسلے میں انٹرپول کے اعتراضات دور کر دیئے جائیں گے۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ایم کیو ایم لندن کی الیکشن کمیشن میں رجسٹریشن روکنے کیلئے قانونی راستہ استعمال کیا جائے گا۔ ایم کیو ایم لندن کی رجسٹریشن کی صورت میں سپریم کورٹ میں ریفرنس دائر کیا جا سکتا ہے

صفحہ نمبر 1 ٹوٹل صفحات 1032


Read Basharat Online

 

 

PentaBuilders

روزنامہ بشارت ٹویٹر


Follow Daily_Basharat on Twitter

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ