ہیڈلائنز

Reporter HH

Write on جمعہ, 04 اگست 2017

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے یوم شہدا پولیس پر پیغام میں کہا ہے کہ ہماری قربانیاں رائیگاں نہیں جانی چاہیں۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے یوم شہدا پولیس کے موقع پر جاری پیغام میں کہا گیا ہے کہ پاک فوج پولیس کےشہدا اوران کے بہادر خاندانوں کو سیلوٹ پیش کرتی ہے جب کہ آرمی چیف جنرل قمر باجوہ کا کہنا ہے کہ ہماری قربانیاں رائیگاں نہیں جانی چاہیں۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ پاک فوج نے ملک میں دہشت گردی کی خاتمےکے لیے ہزاروں پولیس اہلکاروں کو براہ راست تربیت دی ہے، جس میں پنجاب پولیس کے 20ہزار ، خیبرپختونخوا پولیس کے18 ہزار، سندھ پولیس کے17ہزار، بلوچستان پولیس کے 3 ہزار ، آزادکشمیر پولیس کے 2200، اسلام آباد پولیس کے 600 جب کہ گلگت بلتستان پولیس کے 150جوان شامل ہیں۔

Write on جمعہ, 04 اگست 2017

قومی اسمبلی نے عائشہ گلالئی کی جانب سے عمران خان پر لگائے گئے الزامات کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنانے کی تحریک منظور کرلی ہے جب کہ تحریک انصٓاف نے اس کی مخالفت کی ہے۔
قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران عائشہ گلالئی بھی ایوان میں پہنچیں، پیپلز پارٹی کی شگفتہ جمانی نے عائشہ گلالئی کی جانب سے تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان پر لگائے گئے الزامات پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ عائشہ گلا لئی کو سنگین نتائج کی دھمکیاں مل رہی ہیں ، ان سے ان کا موبائل فون چھیننے کی سازش ہورہی ہے، اس معاملے کی تحقیقات کرائی جائے۔ اگر ایسے واقعات ہوئے تو والدین اپنی بچیوں کو گھروں میں بٹھا دیں گے۔
مسلم لیگ (ن) کی رہنما ماروی میمن نے عائشہ گلا لئی کے الزامات پر بات شروع کی تو ہی پی ٹی آئی کی خواتین نے اپنی نشستوں سے کھڑے ہوکر احتجاج شروع کردیا۔ ہنگامہ آرائی اس وقت مزید بڑھ گئی جب مسلم لیگ (ن) کی خواتین ارکان نے عائشہ عائشہ کے نعرے لگانے شروع کردیئے۔ اسی دوران ماروی میمن نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ میں حلفاً کہتی ہوں عائشہ گلالئی کی بات درست ہے، ہم عائشہ گلا لئی کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور سوشل میڈیا پر ان کی کردار کشی کی مذمت کرتے ہیں۔ عائشہ گلالئی کا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ وہ حقیقت قوم کے سامنے لائیں، عائشہ کو (ن) لیگ استعمال نہیں کررہی، ہم پہلے ہی وزیر اعظم کی غلط نااہلی کی وجہ سے صدمے میں ہے، یہ سب تو پی ٹی آئی کا مکافات عمل ہے۔
وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے آئی جی اسلام آباد کو عائشہ گلالئی کو تحفظ فراہم کرنے کی ہدایت کر دی ہے، عائشہ گلالئی کے الزامات سنجیدہ معاملہ ہے، یہ الزام تراشی کی نذرنہیں ہونے دینا چاہیے، یہ ایوان کے تقدس کا معاملہ ہے، ایک ایم این اے نے دوسرے پر الزامات عائد کئے، جن پر الزامات لگے اور جس نے الزامات لگائے دونوں ہی نہایت قابل احترام ہیں، عمران خان پر الزامات کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنائی جائے جو ان کیمرہ تحقیقات کرے۔
تحریک انصاف کی رکن شیریں مزاری نے وزیر اعظم کی تجویز مسترد کرتے ہوئے کہا کہ (ن) لیگ خواتین پرحملے کا ٹریک ریکارڈ رکھتی ہے، خواجہ آصف نے اسمبلی میں مجھے گالی دی تو (ن) لیگی خواتین کیوں نہیں بولی، خواجہ آصف نے آج تک مجھ سے معافی نہیں مانگی، خواجہ آصف میں کوئی شرم حیا نہیں اسمبلی میں گالیاں دیں، اگرتحقیقات کرنی ہیں تو خواجہ آصف کی گالیوں سے شروع کریں، من پسند احتساب نہیں چلے گا، عائشہ گلالئی کے پاس ثبوت ہیں تو پیش کریں۔
بعد ازاں اجلاس کے دوران عارفہ خالد نے معاملے کی ان کیمرا تحقیقات کے لیے خصوصی پارلیمانی کمیٹی کے قیام کی تحریک پیش کی، جسے ایوان نے منظور کرلیا۔

قومی اسمبلی نے عائشہ گلالئی کی جانب سے عمران خان پر لگائے گئے الزامات کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنانے کی تحریک منظور کرلی ہے جب کہ تحریک انصٓاف نے اس کی مخالفت کی ہے۔ قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران عائشہ گلالئی بھی ایوان میں پہنچیں، پیپلز پارٹی کی شگفتہ جمانی نے عائشہ گلالئی کی جانب سے تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان پر لگائے گئے الزامات پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ عائشہ گلا لئی کو سنگین نتائج کی دھمکیاں مل رہی ہیں ، ان سے ان کا موبائل فون چھیننے کی سازش ہورہی ہے، اس معاملے کی تحقیقات کرائی جائے۔ اگر ایسے واقعات ہوئے تو والدین اپنی بچیوں کو گھروں میں بٹھا دیں گے۔مسلم لیگ (ن) کی رہنما ماروی میمن نے عائشہ گلا لئی کے الزامات پر بات شروع کی تو ہی پی ٹی آئی کی خواتین نے اپنی نشستوں سے کھڑے ہوکر احتجاج شروع کردیا۔ ہنگامہ آرائی اس وقت مزید بڑھ گئی جب مسلم لیگ (ن) کی خواتین ارکان نے عائشہ عائشہ کے نعرے لگانے شروع کردیئے۔ اسی دوران ماروی میمن نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ میں حلفاً کہتی ہوں عائشہ گلالئی کی بات درست ہے، ہم عائشہ گلا لئی کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور سوشل میڈیا پر ان کی کردار کشی کی مذمت کرتے ہیں۔ عائشہ گلالئی کا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ وہ حقیقت قوم کے سامنے لائیں، عائشہ کو (ن) لیگ استعمال نہیں کررہی، ہم پہلے ہی وزیر اعظم کی غلط نااہلی کی وجہ سے صدمے میں ہے، یہ سب تو پی ٹی آئی کا مکافات عمل ہے۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے آئی جی اسلام آباد کو عائشہ گلالئی کو تحفظ فراہم کرنے کی ہدایت کر دی ہے، عائشہ گلالئی کے الزامات سنجیدہ معاملہ ہے، یہ الزام تراشی کی نذرنہیں ہونے دینا چاہیے، یہ ایوان کے تقدس کا معاملہ ہے، ایک ایم این اے نے دوسرے پر الزامات عائد کئے، جن پر الزامات لگے اور جس نے الزامات لگائے دونوں ہی نہایت قابل احترام ہیں، عمران خان پر الزامات کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنائی جائے جو ان کیمرہ تحقیقات کرے۔تحریک انصاف کی رکن شیریں مزاری نے وزیر اعظم کی تجویز مسترد کرتے ہوئے کہا کہ (ن) لیگ خواتین پرحملے کا ٹریک ریکارڈ رکھتی ہے، خواجہ آصف نے اسمبلی میں مجھے گالی دی تو (ن) لیگی خواتین کیوں نہیں بولی، خواجہ آصف نے آج تک مجھ سے معافی نہیں مانگی، خواجہ آصف میں کوئی شرم حیا نہیں اسمبلی میں گالیاں دیں، اگرتحقیقات کرنی ہیں تو خواجہ آصف کی گالیوں سے شروع کریں، من پسند احتساب نہیں چلے گا، عائشہ گلالئی کے پاس ثبوت ہیں تو پیش کریں۔بعد ازاں اجلاس کے دوران عارفہ خالد نے معاملے کی ان کیمرا تحقیقات کے لیے خصوصی پارلیمانی کمیٹی کے قیام کی تحریک  پیش کی، جسے ایوان نے منظور کرلیا۔

Write on جمعہ, 04 اگست 2017

اسلام آباد: ایوان صدرمیں نئی وفاقی کابینہ کی تقریب حلف برداری منعقد ہوئی جس میں صدرمملکت ممنون حسین نے 47 رکنی وفاقی کابینہ سے عہدوں کا حلف لیا۔
نوازشریف کی کابینہ میں 20 وفاقی وزرااور9 وزیرمملکت تھے لیکن وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی کابینہ کےارکان کی تعداد 47 ہے جن میں 28 وفاقی وزرا اور 19 وزیر مملکت ہیں۔ گزشتہ کابینہ کے انتہائی موثر ترین وزیرچوہدری نثارموجودہ کابینہ میں شامل نہیں، موجودہ کابینہ میں جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والے وزرا کی تعداد 8 ہے جن میں سے 3 مسلم لیگ ( ن ) کی گزشتہ کابینہ میں بھی شامل تھے۔
نئی کابینہ کی تشکیل کے ساتھ ہی کئی وزارتوں کو توڑ جب کہ کئی کو یکجا کردیا گیا ہے۔ ٹیکسٹائل کی الگ وزارت ختم کرکےاسے تجارت کے ساتھ منسلک کردیا گیا ہے، پوسٹل سروسز کو مواصلات سے الگ کرکےعلیحدہ وزارت بنا دیا گیا ہے جب کہ وزارت پانی و بجلی کو بھی 2 حصوں میں تقسیم کردیا گیا ہے۔ پٹرولیم اور توانائی کو ملا کر نئی وزارت توانائی بنادی گئی ہے۔
خواجہ آصف وزیرخارجہ، وزیرخزانہ اسحاق ڈار، خرم دستگیر وزیردفاع ، احسن اقبال وزیرداخلہ، خواجہ سعد رفیق وزیر ریلوے، مشاہد اللہ خان وفاقی وزیر موسمیاتی تبدیلی، سردار محمد یوسف وفاقی وزیر مذہبی اُمور، سینیٹر صلاح الدین ترمذی اینٹی نارکوٹکس کے وفاقی وزیر، سید جاوید علی شاہ وفاقی وزیر برائے آبی ذرائع، عبدالقادر بلوچ وزیرسیفران جب کہ پچھلی حکومت کے 2 وزرائے مملکت سائرہ افضل تارڑ اور میاں بلیغ الرحمان کو وفاقی وزیربناتے ہوئے صحت اور تعلیم کے قلمدان سونپے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ دیگروفاقی وزرا میں رانا تنویر، سکندرحیات بوسن، پیرصدرالدین، شیخ آفتاب ، کامران مائیکل، مرتضیٰ جتوئی، ریاض پیرزادہ، برجیس طاہر، زاہد حامد اور حاصل بزنجو شامل ہیں۔ پلاننگ ڈویژن وزیراعظم شاہدخاقان عباسی کےماتحت رہے گا۔
پٹرولیم اور توانائی کو ملا کر نئی وزارت توانائی بنادی گئی ہے جس کے انچارج وزیر مملکت عابد شیرعلی مقررکئے گئے ہیں۔ طلال چوہدری وزیر مملکت برائے داخلہ، مریم اورنگزیب انچارج وزیر مملکت برائے اطلاعات مقرر ہوگئیں۔ پرویزملک وزیرمملکت برائے تجارت، طارق فضل چوہدری وزیرمملکت کیڈ، دانیال عزیز وزیرمملکت برائے امور کشمیرجب کہ عثمان ابراہیم وزیرمملکت برائے قانون مقرر ہوگئے ہیں، اس کے علاوہ انوشہ رحمان ، جام کمال، پیر امین الحسنات، جنید انور چوہدری، محسن شاہ نوازرانجھا اورعبدالرحمان کانجو بھی وزیر مملکت بن گئے ہیں

Write on منگل, 01 اگست 2017

اسلام آباد: قومی اسمبلی کا اہم اجلاس آج ہوگا جس میں نئے وزیراعظم کا انتخاب عمل میں لایا جائے گا۔
نئے وزیراعظم کے انتخاب کے لیے قومی اسمبلی کا اہم اجلاس آج ہو گا۔ اسپیکر ایاز صادق کی زیرصدارت ہونے والی اجلاس میں قائد ایوان منتخب کرنے کے لیے ووٹنگ ہو گی۔
حکومت کی جانب سے مسلم لیگ (ن) کے رہنما شاہد خاقان عباسی کو امیدوار نامزد کیا گیا ہے جب کہ حکومت کو جمعیت علمائے اسلام (ف) حمایت بھی حاصل ہے۔
پیپلزپارٹی کی جانب سے 2 نام دیئے گئے ہیں جن میں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ اور سید نوید قمر شامل ہیں، دیگر امیدواران میں جماعت اسلامی کے صاحبزادہ طارق اللہ، ایم کیو ایم پاکستان کی کشور زہرا شامل ہیں۔ تحریک انصاف کی جانب سے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کا نام دیا گیا ہے جس کو (ق) لیگ کی حمایت بھی حاصل ہے۔
واضح رہے قومی اسمبلی میں 342 کے ایوان میں وزارت عظمی کا انتخاب جیتنے کے لیے سادہ اکثریت یعنی کم از کم 172 ووٹوں کی ضرورت ہو گی جب کہ مسلم لیگ (ن) کے پاس 188 ووٹ ہیں اور ںہیں اپنے اتحادیوں کی حمایت بھی حاصل ہے۔ دوسری جانب اپوزیشن کا مشترکہ امیدوار نہ ہونے کی وجہ سے ان کے ووٹ بھی تقسیم ہوں گے۔

Write on جمعہ, 28 جولائی 2017

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ پہلے ہی کہا تھا پپو پانچوں پیپرز میں فیل ہوگا اور قربانی سے پہلے ہی قربانی ہوگئی۔
عوامی مسلم لیگ کے سربراہ اور پاناما کیس کے درخواست گزار شیخ رشید نے عدالتی فیصلے پر اپنے رد عمل کا اظہار ٹوئٹر پر کیا۔
شیخ رشید کا اپنی ٹوئٹ میں کہنا تھا کہ پاکستان جیت گیا اور پہلے ہی کہا تھا پپو پانچوں پیپرز میں فیل ہوگا۔

sheda 2

 

Write on جمعہ, 28 جولائی 2017

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں وزیراعظم نوازشریف کے خلاف فیصلہ آنے کے بعد تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے شکرانے کے نوافل ادا کئے۔
سپریم کورٹ نے پاناما کیس میں نوازشریف کو نااہل جب کہ پوری شریف فیملی کے خلاف مقدمہ درج کرنے اور نیب میں ان کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کا بھی حکم دے دیا ہے۔ خبر ملتے ہی بنی گالہ میں اپنی رہائش گاہ میں موجود تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے شکرانے کے نوافل ادا کئے.

Write on جمعہ, 28 جولائی 2017

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے پاناما کیس میں وفاقی وزیرخزانہ اسحاق ڈار کو بھی نااہل قرار دے دیا ہے۔
پاناما کیس میں وزیراعظم نوازشریف ان کے خاندان اور وفاقی وزیرخزانہ کے خلاف فیصلہ دیتے ہوئے انہیں نااہل قرار دے دیا ہے جب کہ سب کے خلاف نیب میں ریفرنس دائر کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔ عدالت نے اسحاق ڈار کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔
واضح رہے کہ اسحاق ڈار شریف خاندان کے لیے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ کا الزام ہے۔

Write on جمعہ, 28 جولائی 2017

ترجمان مسلم لیگ (ن) کا کہنا ہے کہ نواز شریف وزارت عظمیٰ کے عہدے سے سبکدوش ہوگئے ہیں۔
ترجمان مسلم لیگ (ن) کا کہنا ہے کہ نواز شریف نے وزارت عظمیٰ کا عہدہ چھوڑ دیا ہے جب کہ کابینہ بھی تحلیل ہوگئی ہے۔
ترجمان نے کہا کہ پٹیشن کے اندراج سے فیصلے تک مختلف مراحل میں شدید تحفظات کے باوجود سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد کیا جائے گا۔
ترجمان (ن) لیگ کا کہنا تھا کہ پورے عدالتی عمل کے دوران ایسی مثالیں قائم ہوئیں جن کی ماضی میں کوئی نظیر نہیں ملتی جب کہ منصفانہ ٹرائل کے آئینی اور قانونی تقاضے بری طرح پامال کئے گئے۔
ترجمان کا کہنا ہے کہ ہمارے ساتھ ناانصافی ہوئی ہے، عدالتی فیصلے کے حوالے سے شدید تحفظات ہیں تاہم تمام آئینی و قانونی آپشن استعمال کئے جایئں گے اور عوام کی عدالت میں سرخرو ہوں گے۔
خیال رہے کہ سپریم کورٹ کے 5 رکنی بینچ نے پاناما کیس کے فیصلے میں وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دیا ہے۔

صفحہ نمبر 1 ٹوٹل صفحات 166

تازہ ترین خبریں

کالم / بلاگ